Monday, 15 February 2016

بانو قدسیہ


بانو قدسیہ



ایک دانشور نے محفل میں بانو قدسیہ صاحبہ سے اپنا احساس ظاہر کرتے ہوئے کچھ یوں سوال کیا کہ 
.
' عام طور پر جب میاں بیوی ایک زمانے تک ساتھ رہتے رہیں تو شوہر کی اپنی شخصیت بیوی سے متاثر ہو کر مٹنے لگتی ہے مگر آپ کے کیس میں اس کے بلکل برعکس ہے. اشفاق احمد صاحب کی شخصیت نے تو کوئی خاص اثر قبول نہیں کیا مگر آپ کی اپنی شخصیت اور افکار ان کے زیر اثر نظر آنے لگے. اس کی کیا وجہ ہے ؟ .. کہیں اشفاق صاحب ہلاکو خان کی طرح جابر تو نہیں جو سب مٹا دیں؟ '
.
سامعین نے قہقہے بلند کئے. پھر بانو قدسیہ صاحبہ نے ٹہرے ہوئے لہجے میں کہا کہ 
.
نہیں اگر معاملہ ہلاکو جیسے جبر کا ہوتا تو کوئی مسلہ نہ تھا مگر وہ انسان جو پہلے ہی مٹا مٹا سا ہو ، اسے آپ مٹا نہیں سکتے
.
(ایک انٹرویو سے ماخوز مفہوم)

No comments:

Post a Comment